محکمہ پی ایچ اے ملتان . شہر بھر میں پودے لگانے کے نام پر بوگس ادائیگیوں کا انکشاف

محکمہ PHA چند سالوں میں اربوں کی کرپشن تحقیقات کون کرے بیوروکریٹس پر سوالیہ نشان?

ملتان ( سٹی رپورٹر) محکمہ پی ایچ اے ملتان نے شہر بھر میں پودے لگانے کے نام پر بوگس ادائیگیاں کرنے کا انکشاف تفصیلات کے مطابق محکمہ پی ایچ اے اور ایم ڈی اے نے شہر بھر میں بوگس ادئیگیاں کرنا معمول بنا لیا ایکسپریس ہائی وے اولڈ شجاع اآباد روڈ پر پودے گانے کی مد میں کروڑوں روپے کی ادائیگیاں کر دیں جبکہ پانچ لاکھ سے زائد کا خرچہ نہ کیاگیا ہے اس سے قبل بھی شہر بھر میں فلائی اوورز پر گملے رکھے گئے جن میں پھول والے پودے کے گملے رکھے گئے جو کہ تین ماہ کے اندر ہی چند گملے نظر آتے ہیں جس کی ادائیگی تقریباً دو کروڑروپےبتائی جاتی ہے شاہ شمس پارک کی ادائیگی بھی ایک کروڑ سے زائد کر دی گئی ہے اور اس میں میڈم عروج نے سب انجینئر،ایس ڈی اوکے سائن کئے اور عدنان بٹ نے ڈپٹی ڈائریکٹر پی ایچ اے کے سائن کر کے بھاری بوگس ادائیگی کروا دی جس کی سیکیورٹیاں تک ادا کردی گئیں جبکہ کام ابھی تک نامکمل ہے اور اس پر کئی شکایات محکمانہ شفقت شاہ کو کی گئیں مگر انہوں نے کوئی کارروائی نہ کی مزید میاں واقی پراجیکٹ جناح پارک ،قلعہ پر،گوڈری پارک کبوتر منڈی کے ساتھ اور لینر پارک لاری اڈہ وہاڑی چوک اس سمیت کئی مقاما ت پر پودہ جات درخت لگانا تھے جو کہ احسن شاہ کنٹریکٹر فرم لاہور کو دیا گیا مگر ہر پارک کرپشن کا منہ بولتا ثبوت ہے اور اس وقت بھی قلعہ پر ریٹنگ وال بنائی جارہی ہے اور سیکرٹریٹ ملتان میں ڈیڑھ دو کروڑ سے زائد کے پودہ جات لگانا ہیں کام شروع ہے ادائیگی زائد کر دی گئی مگر اس میں بھی بھاری کرپشن متوقع ہے اس پر احتسابی اداروں میں بیٹھے افسران ڈی جی لیول ہی تعینات ہوتے ہیں جس کی بناء پر کارروائی ناممکن اور محکمانہ کارروائی پھر بھی کچھ سال ہوتی ہے اور کچھ نہ کچھ سزا ہو سکتی ہے مگر چمک کا کمال اکثر کارروائی والا قلم روک لیتی ہے عوامی سماجی حلقوں نے افسران کو عوامی ، قومی دولت کو لوٹنے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں